Press Release & Photo Set Visit of DC at FCCI 07.11.2022

مؤرخہ07نومبر2022ء
 فیصل آباد ( )   فیصل آباد کے فوری مسائل کے حل کیلئے چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے اشتراک سے پانچ فوکسڈ گروپ ایک ہفتہ تک تشکیل دے دیئے جائیں گے جبکہ طویل المدتی حکمت عملی کے تحت شہر کی جامع، منظم اور مربوط ترقی کیلئے آج سے ہی کام شروع ہور ہا ہے اور اس میں  چیمبر کو بھی مؤثر نمائندگی دی جائے گی تاکہ یہاں کے لوگ شروع کئے جانے والے منصوبوں کی اونر شپ لے سکیں اور حکومتوں کی تبدیلی سے یہ التواء کا شکار نہ ہوں۔ یہ بات فیصل آباد کے ڈپٹی کمشنر عمران حامد شیخ نے آج فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے ممبروں سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ فوکسڈ گروپ فیڈمک، گھنٹہ گھر میں کرائسس مینجمنٹ سنٹرکے قیام، تعلیم، شجرکاری اور پارکنگ جیسے فوری نوعیت کے مسائل دیکھیں گے۔ اِن کی مسلسل میٹنگز ہوں گی ابتدائی طور پر متعلقہ شعبہ کو درپیش مسائل کی نشاندہی کی جائے گی جس کے بعد تمام متعلقہ محکموں کے تکنیکی تعاون سے اُن کے حل کیلئے حکمت عملی وضع کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اِن پر عمل درآمد کیلئے جہاں وسائل کی کمی ہو گی وہ بھی آپ کو بھی بتلا دیا جائے گا تاکہ اس کو آپ اپنی سطح پر دور کر سکیں۔ عمران حامد شیخ نے بتایا کہ اندرون شہر گھنٹہ گھر اور آٹھ بازاروں میں اربوں کا کاروبار ہوتا ہے جو دنیا کے کسی بھی بڑے ڈاؤن ٹاؤن ایریا سے کم نہیں۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے یہاں کسی بھی ہنگامی حالات سے نمٹنے کیلئے کوئی نظام موجود نہیں۔ انہوں نے گزشتہ ماہ منٹگمری بازار میں آتشزدگی میں 7قیمتی جانوں کے ضیاع کا ذکر کیا اور کہا کہ انہوں نے گھنٹہ گھر میں بیٹھ کے اِن حالات کا تجزیہ کیا اور پہلے قدم کے طور پر یہاں کرائسس مینجمنٹ سنٹر قائم کر دیا گیا ہے۔ جہاں چوبیس گھنٹے سول ڈیفنس، 1122اور محکمہ صحت کی ٹیم موجود ہو گی جبکہ پولیس پہلے ہی موجود ہوتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آتشزدگی کی وجہ سے دو بچے دم گھٹ کر جاں بحق ہو گئے۔ انہوں نے جب اس سلسلہ میں پتہ کیا تو معلوم ہوا کہ ماسک صرف ریسکیو کے عملہ کیلئے ہوتے ہیں تاہم وہ سول ڈیفنس کے ذریعے لوگوں کیلئے بھی ماسک کا بندوبست کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اندرون شہر کی تمام عمارتوں کا تجزیہ کر کے ہنگامی صورتحال میں لوگوں کے فوری انخلا کیلئے پلان مرتب کیا جائے گاس اور لوگوں کو ضروری تربیت دی جائے گی۔ مزید برآں  اِن عمارتوں میں آگ بجھانے کے آلات نصب کرنے کے علاوہ الگ الیکٹر ک روم بھی قائم کروائے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ فیسکو نے ا س سلسلہ میں شارٹ ٹرم کنسلٹنٹ کی خدما ت حاصل کر لی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ایک ٹرانسفارمر سے منسلک تاروں کو درست کرنے کیلئے تقریباً چالیس لاکھ کا خرچہ آئے گا جس میں سے ایک شخص نے 8لاکھ دینے کا وعدہ کر لیا ہے جبکہ دوسرے لوگوں کو بھی متحرک کیا جائے گا کہ وہ اس میں اپنا حصہ ڈالیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس سلسلہ میں جو احکامات ڈپٹی کمشنر آفس سے جاری ہوں گے اُن کی ایک کاپی چیمبر کو بھی ارسال کی جائے گی تاکہ اس سلسلہ میں ہونے والی پیش رفت سے آپ لوگ بھی آگاہ رہیں۔ پارکنگ کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ مجوزہ 14منزلہ پارکنگ پلازہ میں گراؤنڈ فلو ر اور اُس کی چھت مکمل ہے جہاں ریمپ وغیرہ لگانے کا حکم دے دیا گیا ہے تاکہ یہاں 1800کے قریب موٹر سائیکلیں فوری طور پر پارک کی جا سکیں۔ انہوں نے بتایا کہ کمشنر شاہد نیاز کی ابھی حال میں ہی تعیناتی ہوئی ہے اُن سے کرائسس مینجمنٹ سنٹر اور پارکنگ پلازے کا افتتاح کرائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ماحولیات کے بارے میں ایک ورکنگ گروپ بنایا جا رہا ہے۔ محکمہ ماحولیات کا سٹاف مبینہ طور پر آلودگی پیدا کرنے والوں کے خلاف کارروائی سے قبل ماحولیات اور چیمبر کی مشترکہ کمیٹی سے رجوع کرے گا تاکہ پہلے مرحلہ میں وارننگ دی جائے گی جبکہ بار بار خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف ہی کارروائی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ اس ورکنگ گروپ کا نو ٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے جبکہ صدر چیمبر اس کیلئے اپنا نمائندہ جلد نامزد کردینگے۔ انہوں نے واضح کیا کہ سرکاری محکموں کا مقصد صنعت و تجارت کو سہولتیں مہیا کرنا ہے جب یہ شعبہ بہتر ہوگا تو معیشت خود بخود چلنے لگے گی۔ فیڈمک کا ذکر کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ اِس کے حالات بہت خراب تھے تاہم اُن کی نشاندہی کر لی گئی ہے اور ہاؤسنگ کالونیوں کی طرح انڈسٹریل اسٹیٹ میں آنے والے کھالوں کی سرکاری زمین کے برابر ایک compactپلاٹ سرکار کے نام کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں پنجاب کی سطح پر کوئی پالیسی نہیں تھی تاہم اب اس شق کو اس میں شامل کر لیا گیا ہے تاکہ زمین Acquireکرنے سے متعلقہ مسائل کو مستقل بنیادوں پر حل کیا جا سکے۔ بھٹوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ یہاں کام کرنے والے مزدوروں کو سوشل سیکورٹی کارڈ ملنے چاہئیں۔ اسی طرح جو فیکٹریاں اپنے مزدوروں کی کنٹری بیوشن دے رہی ہیں انھیں بھی کارڈ نہیں ملے۔ وہ ذاتی دلچسپی لے کر اِس کام کو آگے بڑھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ غیر روایتی سکول بھی دوبارہ شروع کئے جا رہے ہیں تاکہ بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیم کی سہولت مہیا کی جا سکے۔ واسا کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ شہرمیں بہت سے واٹر فلٹریشن پلانٹ لگے ہوئے تھے مگر ڈی سی آفس میں اِ ن کی Plotingنہیں تھی۔ انہوں نے بتایا کہ فوڈ اتھارٹی کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ہر ماہ کے پہلے ہفتہ میں اِن کی ٹیسٹنگ کرے گی اور آئندہ ٹیسٹنگ کی تاریخ  بھی فلیکس کے ذریعیمتعلقہ پلانٹ پر آویزاں کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ بھکاریوں اور مسافروں کو پناہ گاہ منتقل کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے جس کا ڈیٹا دستیاب ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سڑکوں اور سکولوں کی چیکنگ کے حوالے سے بھی پروگرام دیا جائے گا تاکہ لوگ اس بارے میں براہ راست اپنے مسائل سے متعلقہ افسر کو آگاہ کر سکیں۔انہوں نے بتایا کہ اس مقصد کیلئے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل کو مختص کر دیا گیا ہے تاکہ وہ فیلڈ کے مسائل کو دیکھیں اور انہیں حل کرائیں۔ انہوں نے چھاپوں کے بارے میں کہا کہ اِن کا کوئی فائدہ نہیں وہ کسی بھی جگہ جانے سے پہلے متعلقہ محکمہ کو آگاہ کرتے ہیں جس سے اُن کے معاملات میں بہتری آنا شروع ہو جاتی ہے۔ شجرکاری کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چیمبر نے ایک ہزار پودے لگائے ہیں جبکہ آئندہ سیزن میں ضلعی انتظامیہ دس لاکھ پودے لگائے گی اس کیلئے چیمبر سے مل کر ابھی سے پلان تیار کر لیا جائے گا تاکہ ان کی مستقل بنیادوں پر حفاظت بھی کی جا سکے۔ انڈر پاسز میں رسنے والے پانی کا ذکر کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ نہروں میں جب پانی کم ہوگا تو اُن کی پائیدار مرمت کر دی جائے گی تاہم وقتی طور پر ریلیف کیلئے بھی فوری اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس شہرکی اصل طاقت یہاں کے لوگ ہیں جبکہ انتظامی قوت حکومت کے پاس ہے۔ وسائل آپ لوگوں کے پاس ہیں۔ اگر ہم دونوں مل جائیں تو بہت سے مسائل از خود حل ہو سکتے ہیں جس سے شہر میں ترقی کا عمل تیز ہو گا۔عمران حامد شیخ نے یقین دلایا کہ وہ شہر کی بہتری کیلئے مخلصانہ کوششیں کریں گے تاکہ لوگوں کو ریلیف مہیا کیا جا سکے۔ انہوں نے فیصل آباد چیمبر کے سامنے ریمپ بنانے کا بھی وعدہ کیا اور بتایا کہ انہیں چیمبر کی طرف سے پہلا خط پودے لگانے کا ملا جو قابل تحسین ہے۔ ایک سوال کے جواب میں ڈپٹی کمشنر نے شہر کی اہم سڑکوں پر قبرستانوں کیلئے جگہ مختص کرنے کا بھی یقین دلایا اور کہا کہ گٹ والا ٹول پلازہ کو کھرڑیانوالہ منتقل کرنے کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ محکموں کے تعاون سے شیخوپورہ روڈ سمیت دیگر سڑکوں کی مرمت بھی کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ضلع کونسل کے پاس 200بیلدار ہیں جن کو ایک ہفتہ تک کینال روڈ پر تعینات کر دیا جائے گا۔ انہوں نے ڈی گراؤنڈ کے 15سنٹر کوون فائیو پلس بنانے اور یہاں مزید سہولتیں مہیا کرنے کا بھی یقین دلایا۔ مہنگائی کے بارے میں انہوں نے کہا کہ 24مارکیٹوں میں ڈی سی مانیٹرنگ سکواڈ کام کر رہا ہے جس کا دائرہ کار جلد دوسرے علاقوں تک بڑھایا جائے گا۔ پارکنگ کے بارے میں انہوں نے ہفتہ وار یا ماہوار کارڈی جاری کرنے کی بھی تجویز پیش کی اور کہا کہ اس پر جلد کام شروع کر دیا جائے گا۔انہوں نے ریلوے روڈ پر بارشی اور سیوریج کے پانی کے فوری نکاس، لاری اڈہ کے اطراف میں فیکٹریوں کے کالے دھویں اور ریلوے روڈ مارکیٹ کے عقب میں محکمہ انہار کے سرکاری کواٹرز کی طرف سے پیدا ہونے والے مسائل کو بھی فوراً حل کرنے کا یقین دلایا۔اس سے قبل فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر ڈاکٹر خرم طارق نے ڈپٹی کمشنر کا خیر مقدم کرتے ہوئے اس توقع کا اظہار کیا کہ وہ اس شہر کے سپوت ہونے کے ناطے اس کی ترقی کے حوالے سے دیر پا نقش چھوڑ کر جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس شہر کی فی کس آمدنی سب سے زیادہ ہے مگر پہلے اس شہر نے تیزی سے ترقی کی مگر اب یہ بہت پیچھے رہ گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گھنٹہ گھر کو یونیسف کی Heritage site  پر ہونا چاہیے۔ خواہ اس کیلئے ہمیں تحریک چلانا پڑے۔ انہوں نے آٹھ بازاروں میں ٹرام یا پید ل چلنے والوں کیلئے الگ راستوں کی بھی تجویز پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ انڈسٹریل اسٹیٹ چنیوٹ سے ایم تھری تک پھیلی ہوئی ہے۔ اس کے باوجود اس شہر میں آلودگی لاہور اور گوجرانوالہ سے بہت کم ہے۔ انہوں نے آئی ٹی کی ترقی کیلئے فوری بنیادی ڈھانچہ مہیا کرنے پر زور دیا اور کہا کہ سعودی عرب کی تیل کی 115ارب ڈالرکی آمدن کے برعکس انڈیا کے دو شہر حیدر آباد اور بنگلور آئی ٹی سے کہیں زیادہ کما رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ فیصل آباد کو ملک کا ترقی یافتہ اور جدید شہر دیکھنے کا خواب دیکھ رہے ہیں اور انہیں یقین ہے کہ اُن کا یہ خواب جلد پورا ہوگا۔ڈاکٹر خرم طارق نے سٹیڈویلپمنٹ پلان، محکمہ تعلیم، شجرکاری، ویلفیئر اربن یونٹ، لیبر ویلفیئر، پبلک پالیسیز، مانیٹرنگ ٹیمز، پائلٹ پراجیکٹس، فیصل آباد انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی، منٹگمری بازار کے باہر پارکنگ، شہر کی صفائی، میونسپل سروسز اورمحکمہ کمیونی کیشن اینڈ ورکس کی کارکردگی میں بہتری کیلئے بھی تجاویز پیش کیں۔ اس موقع پر سوال و جواب کی نشست بھی ہوئی جس میں حاجی محمد عابد، ثناء اللہ نیازی، شفیق حسین شاہ، محمد طیب، میاں عبدالوحید، خالد بشیر آرائیں، عابد عزیز، سہیل بٹ، مقصود بٹ، میاں تنویر احمد، غلام حسین، رانا شاہد رضا،ملک منظور احمد، ملک منظور مقبول، شکیل احمد انصاری، رانا عاصم، محمد واصف اور شاہد لطیف نے حصہ لیا۔ اس تقریب کے ماڈریٹر ڈاکٹر حبیب اسلم گابا تھے جبکہ سابق صدر رانا محمد سکندر اعظم نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔ آخر میں صدر ڈاکٹر خرم طارق نے ڈپٹی کمشنر عمران حامد شیخ کو فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کی اعزازی شیلڈ پیش کی۔ اس موقع پر سینئر نائب صدر ڈاکٹر سجاد ارشد اور دیگر ایگزیکٹو ممبران بھی موجود تھے۔

Leave a Reply