Press Release & Photo Set 01.11.2022

 فیصل آباد ( )   فیصل آباد کی بزنس کمیونٹی کی طرف سے سیلاب زدگان کیلئے امدادی سامان بھیجنے کا سلسلہ جاری ہے جبکہ آج مزید چار ٹرک رضائیاں، مچھر دانیاں اور دیگر سامان لے کر نوشکی اور روجھان جمالی کیلئے روانہ ہوئے۔دو ٹرک فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری جبکہ دو ٹرک براہ راست آل پاکستان بیڈ شیٹس اینڈ اَپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے دفتر سے روانہ ہوئے۔اس موقع پر فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے سینئر نائب صدر ڈاکٹر سجاد ارشد نے کہا کہ فیصل آباد کی تاجر اور بزنس کمیونٹی نے کار خیر کے کاموں میں ہمیشہ بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے اور ان کی کاوشوں سے آج فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کی شناخت میں خیراتی کام سر فہرست ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ ملک بھر کے لوگوں نے متاثرین کی مدد کی ہے مگر سب سے پہلے اور سب سے زیادہ سامان بھیجنے والوں میں فیصل آباد پہلے نمبر پر ہے۔انہوں نے دہ دنیا۔ ستر آخرت کا محاورہ دوہرایا اور کہا کہ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے ممبران اس اصول پر عمل پیرا ہیں اور اسی وجہ سے اُن پر اللہ تعالیٰ کی خاص رحمت ہے۔ وہ جتنا خرچ کرتے ہیں اس میں کمی نہیں ہوتی اور اُن کے کاروبار میں برکت ہی برکت پڑتی ہے۔ انہوں نے امدادی سرگرمیوں کو منظم کرنے میں خاص طور پر صدر ڈاکٹر خرم طارق اور میاں جاوید اقبال کی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ اُن کی راہنمائی کی وجہ سے پسماندہ علاقوں کے انتہائی مستحق لوگوں کی مشکلات کم ہو رہی ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ چند روز پہلے ہی 400رضائیوں پر مشتمل ایک ٹرک خیبر پختونخواہ کے علاقہ دیر کیلئے بھیجا گیا تھا جہاں سردی شدت پکڑتی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے علاقوں میں بھی سردی بڑھ رہی ہے اس لئے اُن کیلئے 800رضائیاں،  1500مچھر دانیاں اور بچوں کیلئے ٹافیوں کے 300پیکٹ بھیجے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سامان کو روجھان جمالی اور نوشکی (بلوچستان) کے متاثرین میں تقسیم کیا جائے گا۔ جو عام طور پر امدادی تنظیموں کی دسترس سے مدد ہے۔ انہوں نے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ یہ عطیات دینے والوں کے کاروبار میں مزید برکت ڈالے اور انھیں پہلے سے بھی زیادہ عطیات دینے کی توفیق عطا فرمائے۔ اس موقع پر میاں جاوید اقبال کے علاوہ آل پاکستان بیڈ شیٹس اینڈ اَپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے عارف احسان ملک، سابق صدر چیمبر انجینئر احتشام جاوید، حاجی محمد عابد، میاں طیب اور شفیق حسین شاہ بھی موجود تھے۔

Leave a Reply